اردو بول چالاردو سیکھیںاردو گرائمر

اردو زبان کا مختصر تعارف

اردو ترکی زبان کا لفظ ہے جسکا مطلب ہے فوج،چھاونی،لشکر.اردو ترکی، ہندی،عربی،فارسی اور سنسکرت زبانوں کا مجموعہ ہے.ابتدائی زمانے میں اردو کے مختلف نام تھے جن میں ہندوی،ہندوستانی اور ریختہ بھی شامل تھا.ہندوستان میں اردو کی ابتدا مسلمان فاتحین کی آمد سے ہوئی.ان مسلمان فاتحین میں ترک،مغل اور افغان شامل تھے.ان لوگوں نے اپنے ساتھ اپنی روایات،رہن سہن کے طریقے،معاشرتی آداب و اخلاق اور اپنی اپنی زبانوں کے قاعدے اور صرف و نحو لے کر آئے.ان لوگوں کی اپنی زبان فارسی تھی اور زیادہ تر فارسی بولتے تھے. ان لوگوں کا مقامی لوگوں کے ساتھ ملنا اور مقامی زبان پر اثرات وتآثر چھوڑنے کی وجہ سے ایک نئی زبان وجود میں آئی،جو بعد میں اردو کہلائی اس لئیے اسے لشکری زبان کہا جاتا ہے.سب سے پہلے اردو کا لفظ بابر نے "تزک بابری“ میں استعمال کیا ہے.
دورِ مغل میں شاہی لشکر یا لشکر گاہ کو "اردو معلٰی” کہا جاتا تھا اور جس بازار میں فوج کے سپاہی خرید و فروخت کیلئے جاتے تھے اسے "اردو بازار“ کہا جاتا تھا.اردو زبان کا سب سے پہلا شاعر امیر خسرو تھا جسکی پہلی تحریر ۶۵۳ ھجری میں ملتی ہے .
تیرھویں صدی تا پندرھویں صدی کا زمانہ اردو زبان کا تشکیلی دور تھا.اس زمانے میں مذہبی مبلغین نے عوام کی زبان میں تبلیغ کا کام شروع کیا اور اردو کو مزید پھلنے پھولنے کا موقع ملا.مرزا محمد رفیع سودا اور میر تقی میر کے زمانے میں اردو کافی حد تک ہندوستان میں پھیل گئی اور تلفظ بھی صاف ہو گیا.انگریزی زبان کے استعمال سے اردو زبان میں مزید وسعت آئی.ایسٹ انڈیا کمپنی کے ماتحت فورٹ ولیم کالج کے قیام سے بھی اردو کو کافی ترقی ملی.اخبارات اور مختلف رسالو نے بھی اردو زبان کا رنگ نکھارنے میں خوب کردار ادا کیا اور زبان میں نئے الفاظ،مختلف اصلاحات اور تشبیہات کا اضافہ ہوتا گیا.اردو زبان کی ارتقاء اور تشکیل میں مختلف قوموں کی مشترکہ تمدن اور تہذیبی اثرات نے کردار ادا کیا ہے.اردو زبان آج بھی برصغیر کی نمائندہ زبان کی حثیت رکھتی ہے.اور یہ پاکستان کی سرکاری جبکہ ہندوستان کی ۲۳ ویں زبانوں میں سے ایک ہے.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ مضامین

یہ بھی چیک کریں
Close
Back to top button
Close
Close