اردو سیکھیںاردو گرائمر

لفظ سے کیا مراد ہے؟

لفط کے معنی منہ سے نکالنا یا پھینکنا کے ہیں مگر قوعد کی رو سے لفط سے مراد ایسی تمام باتیں یا آوازیں جو انسان اور غیر انسان کی منہ سے نکلتی ہیں ” لفظ” ہے. لفظ کی جمع الفاظ ہے. مثلاً:
کتاب، میز،گاڑی،قلم،دروازہ وغیرہ
یہ سب الفاظ ہیں.

لفظ اور معنی

یوں تو لفظ حرفوں، لکیروں اور دایروں کا نام ہے لیکن ان میں ایک حقیقت اور معنی پوشیدہ ہوتی ہے.مثلًا:
جینا،حیات،زندگی اور زیست.ان لفظوں کا ایک ہی معنی ہے اور وہ ہے زندگی.

معنی کی اقسام

معنی کے چار اقسام ہیں جو درجہ ذیل ہیں:
حقیقی معنی، مجازی معنی، اصطلاحی معنی اور مرادی معنی.

حقیقی معنی

حقیقی معنی کو لفظی اور لغوی معنی بھی کہتے ہیں اگر کوئی لفظ ان معنوں میں بولا جائے جن معنوں کے لئے بنایا گیا ہے تو اسکو حقیقی معنی کہتے ہیں. مثًلا:
زیست کی حقیقی معنی” زندگی“ کے ہیں.یہی ان کے حقیقی اور لفظی معنی ہیں.

مجازی معنی

اگر کوئی لفظ ان معنوں میں نہ بولا جائے جن معنوں کے لئے بنایا گیا ہے تو یہ اسکی مجازی معنی ہے مثلًا:

گیدڑ کا لفظ ہم جنگل کے جانور کے لئے استعمال کرتے ہیں.لیکن جب ہم یہی لفظ ایک بزدل اور ڈرپوک شخص کے لئے اسعتمال کرتے ہیں تو پھر یہاں مجازی معنی دیتا ہے.یعنی یہاں اس سے مجازی معنی مراد لیتے ہیں حقیقی نہیں.

اصطلاحی معنی

ہر معاشرے میں ہر طبقے کے لوگ رہتے ہیں ان لوگوں کی اپنی اپنی اصطلاحات ہوتی ہیں.مثال کے طور پر لفظ “پرچہ “ ایک لفظ ہے تعلیم کی رو سے لفظ پرچہ کاغذ کا وہ ٹکڑا ہوتا ہے جو طالب علم امتحان دینے کے لئے استعمال کرتے ہیں. لیکن یہی لفظ” پرچہ” اگر پولیس کی اصطلاح میں استعمال کیا جائے تو پھر کاغذ کا وہ ٹکڑا ہے جو پولیس کسی مجرم کے لئے استعمال کرتی ہیں.
اسی طرح عوام کی اصطلاح میں لفظ “فعل” کام کو کہتے ہیں ،مگر قواعد کی اصطلاح میں فعل سے مراد، وہ کام جس میں زمانہ موجود ہو یعنی زمانے کے مطابق جو کام ہوجائے.

مرادی معنی

کھبی کھبی شاعر اور ادیب بولتے کچھ اور ہے مگر مطلب کچھ اور ہوتا ہے مثلًا:
چولہا جل رہا ہے اسکا یہ مطلب نہیں کہ چولہا خود جل رہا ہے مطلب یہ ہے کہ آگ جل رہی ہے یا لکڑی جل رہی ہے..

اب لفظ کی اقسام

لفظ کے دو اقسام ہیں. کلمہ اور مہمل

کلمہ

وہ لفظ جسکے کچھ معنی ہو اور جس سے سننےوالا کوئی مطلب اسانی سے اخذ کرسکے، کلمہ کہلاتا ہے. مثلًا:
چائے، پانی، کپڑے ، سگریٹ، کام . وغیرہ
یہ وہ الفاظ ہیں جسکے معنی خوب واضح ہیں اور سننے والا اس سے مطلب اخذ کر سکتے ہیں.

مہمل

وہ لفظ جسکے کچھ معنی نہ ہو ،مگر کلمے سے مل کر معنی اور مفہوم ادا کرتا ہے. مثلًا:

کام وام کچھ بھی نہ کرو
چائے وائے پیو
میرے کپڑے شپڑے کدھر ہیں

درجہ بالا مثالوں میی ” وام“ ، ” وائے “ اور ” شپڑے ” ایسے الفاظ ہیں، جو اکیلے معنی نہیں دے دیتے مگر کلمہ سے مل کر معنی اور مفہوم ادا کرتے ہیں.

تبصرے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close