بین الاقوامیخبریں

امریکا نے ایران پر نئی پابندیاں عائد کردیں

وینزویلاکے ساتھ تیل کی تجارت پر امریکا نے ایران پر نئی پابندیاں عائد کردیں

الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق امریکی سیکریٹری خارجہ مائیک پومپیو نے حکومت کی طرف سے  وینزویلا کے صدر کے مخالف جووان گوائیڈو کی حمایت کا فیصلہ کیا ہے ۔ ٹرمپ انتظامیہ ایران کی توانائی کی تجارت کو روکنا چاہتی ہے جب کہ دوسری طرف وینزویلا میں نکولس مدورو کو صدارت سے ہٹانے کی کوششوں میں مصروف ہے۔

امریکا کے محکمہ خارجہ میں نیوز کانفرنس میں مائیک پومپیو نے کہا کہ ان جہازوں نے تقریباً 15 لاکھ بیرل ایرانی تیل اور پیٹرولیم مصنوعات فراہم کیں اور وینزویلا کے صدر نکولس مدورو کے ساتھ کاروبار کرنے پر خبردار کردیا جن کو امریکا اقتدار سے ہٹانا چاہتا ہے۔امریکا نے وینزویلا کو تیل پہنچانے والے 5 ایرانی جہازوں پر پابندی عائد کردی۔

وینزویلا کے صدر نے ملکی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ایران سے تیل درآمد کیا جس کے نتیجے میں امریکی صدر کی انتظامیہ کو یہ فیصلہ ناگوار گزرا۔ ان کا کہنا تھا کہ ‘ایران پر عائد نئی پابندیوں کے تحت جہازوں کے کپتانوں کے اثاثے منجمد ہوں گے اور ان کے مال بردار جہاز اپنی منزل کے حوالے سے مشکلات کا شکار ہوں گے’۔

پومپیو نے کہا کہ ‘ایران اور وینزویلا کے ساتھ تجارت کرنے کے خواہاں بحری جہازوں کو معلوم ہونا چاہیے کہ ان حکومتوں کے ساتھ تجارت کرنے کا کوئی فائدہ نہیں ہے’۔

امریکا نے ایران اور وینزویلا سے مخاصمت کے باعث بندرگاہوں، شپنگ کمپنیوں اور ان سے منسلک دیگر اداروں کو دونوں ممالک سے تجارت کرنے سے خبردار کردیا ہے۔

مائیک پومپیو نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا تھا کہ امریکا، تہران کی تیل برآمد کرنے کی صلاحیت کو ختم کرنے کے لیے مسلسل دباؤ جاری رکھے گا۔

تبصرے

ٹیگز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close