ادبشاعری تراجم
ٹرینڈنگ

ابو العلاء المعری/ ترجمانی :احمد تراث


شاعر: ابو العلاء المعری (معرۃ النعمان، شام، 973ء ـ 1057ء)
ترجمانی: احمد تراث

میرے مذہب اور عقیدے میں
رونے والے کا نوحہ کرنا
اور خوش باش کا گنگنانا
دونوں بےفائدہ ہیں

اگر غور کیا جائے
تو کسی بھی مجلس میں
موت کی خبر سنانے والے
اور خوشخبری لے کر آنے والے کی آواز
ایک جیسی ہی ہوتی ہے

کیا خبر
کہ یہ جھومتی ہوئی شاخ پر بیٹھی کبوتری
گریہ کر رہی ہے
یا نغمہ خواں ہے

اے دوست
یہ تو ہماری قبریں ہیں
جنہوں نے زمین کی وسعت کو بھر دیا ہے
تو گزرے زمانوں ( کے لوگوں) کی قبریں کہاں گئیں؟

(زمین پر) آہستہ آہستہ قدم رکھو
کہ میرے گمان کے مطابق
زمین کی سطح
انہی (قدیم) جسموں سے بنی ہوئی ہے

اگرچہ بہت زمانہ بیت چکا ہے
مگر ہمارے لیے یہ امر قبیح ہے
کہ اپنے ان آباء و اجداد کی توہین کریں

اگر تم سے ہو سکے
تو ہوا میں ٹھہر ٹھہر کر چلا کرو
نہ کہ (فوت شدہ) لوگوں کی شکستہ ہڈیوں پر
تکبر سے قدم رکھتے ہوئے

بہت سی قبریں
جو متعدد مرتبہ قبر بن چکی ہیں
اس بات پر ہنستی ہیں
کہ ان میں متضاد میتیں جمع ہو چکی ہیں

تبصرے

ٹیگز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close