ادبی تحاریربلاگتراجمشاعری تراجم

غیرمرئی دنیا کا معجزہ /حسین عابد



غیرمرئی دنیا کا معجزہ

شاعر ۔ چارلس سیمیچ
ترجمہ ۔ حسین عابد

شراب، جو ہونٹ اور زبان سرخ کر دیتی ہے
اس پر تمہاری نیم سرگوشی میں سنائی کہانی
جیسے نوجوان چڑیلیں
ایسی ہی راتوں میں کبھی
شادی شدہ مردوں پر سواری گانٹھے
آسمان میں اڑتی تھیں

ستارے جلتی شمعوں جیسے تھے
تنہا آوارہ گردی
اور دھند آلود جنگل
رات کا بہتا ہوا سفید ملبوس
جیسے کل کی بات ہو، میں نے کہا
جب بوڑھے سمیل نے ہمیں
مردہ پتوں کے بستر میں گھسا دیا تھا

تم کالی بلی بن گئیں
اور میں ہاتھ پیروں کے بل تمہارے پیچھے بھاگا
ایک چرچ میں۔ یا شاید یہ نشست کا کمرہ تھا
جہاں پیچھے لگے ایک کتے نے ہمیں گھسا دیا
وہی کتا جس کے بھونکنے کی آواز
بستی سے آرہی ہے۔۔۔

تبصرے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close